آخرکار سعودی شہزادی ’ بسمہ‘ اور انکی بیٹی کو رہا کر دیا گیا!دونوں ماں بیٹیاں کس جُرم میں جیل میں تھیں؟

Date:

Share post:

سعودی عرب میں سماجی کارکنان کا کہنا ہے کہ ایک شہزادی اور ان کی بیٹی کو بغیر کسی الزام قریب تین سال تک انتہائی حفاظت والی پرزن (قید خانے ) میں رکھنے کے بعد اب رہا کر دیا گیا ہے۔شہزادی بسمہ بنت سعود کو مارچ 2019 میں حراست میں لیا گیا

جب وہ طبی معائنے کے لیے سوئٹزر لینڈ جانے کی تیاری کر رہی تھیں۔یہ معلوم نہیں کہ انھیں کیوں حراست میں رکھا گیا تھا۔ اس دوران بسمہ بنت سعود یا ان کی بیٹی سہود پر کوئی جُرم عائد نہیں کیا گیا۔بعض لوگوں کا خیال ہے کہ اس کی وجہ ان کی جانب سے انسانی حقوق کے تحفظ اور آئین میں اصلاحات کے مطالبات ہیں۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق ان کے خاندان نے 2020 میں ایک بیان کے ذریعے اقوام متحدہ کو بتایا تھا کہ ممکنہ طور پر اس کی وجہ ان کی جانب سے جبر کے خلاف بولنا ہے۔تاہم بعض حلقوں کا خیال ہے کہ ان کی گرفتاری کی وجہ ان کے سابق ولی عہد محمد بن نایف کے ساتھ قریبی تعلقات ہیں۔ اطلاعات کے مطابق نایف کو گھر میں نظر بند رکھا گیا ہے۔57 سالہ شہزادی بسمہ نے گذشتہ اپریل سعودی بادشاہ سلمان اور ولی عہد محمد بن سلمان سے رہائی کا مطالبہ کیا تھا۔

انھوں نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ انھوں نے کچھ غلط نہیں کیا اور اب ان کی صحت بھی متاثر ہو رہی ہے۔یہ معلوم نہیں ہے کہ 2019 میں حراست میں لیے جانے کے وقت وہ بیرون ملک کس طبی معائنے کے لیے جا رہی تھیں۔ٹوئٹر پر انسانی حقوق کی تنظیم اے ایل کیو ایس ٹی نے کہا ہے کہ انھیں طبی امدید نہیں دی گئی جبکہ ممکنہ طور پر وہ ایک جان لیوا عارضے میں مبتلا تھیں۔ انھیں دارالحکومت ریاض کے مضافات میں الحاير قید خانے میں رکھا گیا تھا۔سعودی تنظیم نے مزید کہا کہ ’انھیں حراست میں رکھے جانے کے دوران کسی بھی وقت ان کے خلاف کوئی جُرم عائد نہیں کیا گیا۔

(FILES) In this file photo taken on April 12, 2017, Saudi Princess Basmah bint Saud bin Abdulaziz speaks during a discussion on the role of women in the Middle East at the Middle East Institute in Washington, DC. – A year after landing in jail without charge, her mercy plea unanswered by Saudi rulers and in fear of a coronavirus outbreak behind bars, a prominent princess did the unthinkable — and went public. Princess Basmah bint Saud, a 56-year-old royal family member long seen as a proponent of women’s rights and a constitutional monarchy, mysteriously disappeared from public life in March last year. (Photo by MANDEL NGAN / AFP)

‘شہزادی بسمہ سعودی عرب پر سنہ 1953 سے 1964 تک حکومت کرنے والے شاہ سعود کی سب سے چھوٹی بیٹی ہیں۔انھوں نے سعودی شاہی خاندان میں انسانی ہمدردی کے امور اور آئینی اصلاحات کی ایک نمایاں وکیل کی حیثیت سے اپنی پہچان بنائی ہے۔اپریل 2020 کے دوران انھوں نے اپنے تصدیق شدہ ٹوئٹر اکاؤنٹ سے سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان سے اپیل کی تھی کہ انھیں قید سے آزاد کیا جائے۔

spot_img

Related articles

This was bound to happen: What did actress Manal Khan once again get caught red-handed doing?

As soon as they saw the picture, the internet users started a series of unending comments...

Behrooz Sabzwari apologized to Khalil-ur-Rehman Qamar but why? Fans were also surprised to know

Lahore (Web Desk) Senior Pakistani actor Behrooz Sabzwari has apologized to Khalil-ur-Rehman Qamar. A few days ago,...

Famous actor Khaliq Haqeeqi, who played a major role in the Turkish series ‘Korolus Usman’, passed away

ISTANBUL (Web Desk) - Actor Junaid Arkan, who played a key role in the popular Turkish...

Does this also happen in spouses? Actress Sofia Mirza has made embarrassing allegations against her ex-husband

Lahore (News Desk) Actress Sofia Mirza has accused her ex-husband of threatening her and said that Omar Farooq...